أخر الأخبار

پاکستان میں برف باری کے باعث 22 افراد ہلاک ہو گئے۔

أخبار عالمية

پاکستان میں برف باری کے باعث 22 افراد ہلاک ہو گئے۔

 

گزشتہ رات پاکستان کے پہاڑی تفریحی مقام مورے میں ایک المناک حادثہ پیش آیا جس میں 22 افراد اپنی گاڑی میں ہائپوتھرمیا کی وجہ سے جاں بحق ہو گئے جو کہ گاڑی کے اندر ہی پھنس گئے، شدید برفباری کے باعث درجہ حرارت صفر سے 8 ڈگری سینٹی گریڈ تک گر گیا۔ ریزورٹ اسلام آباد پولیس کے ایک افسر نے اشارہ دیا کہ حادثہ رات کے وقت ریزورٹ میں پیش آیا، جس میں 22 افراد ہلاک ہوئے، انہوں نے بتایا کہ ان میں سے 8 کا تعلق اسلام آباد پولیس میں ان کے ساتھی افسر “نوید اقبال” کے خاندان سے تھا، جو بھی اس حادثے میں جاں بحق ہوئے۔ اسلام آباد کے قریب موری پہاڑی ریزورٹ ڈراؤنے خواب میں بدل گیا۔ حتمی نتیجہ: بچوں سمیت 22 افراد ہلاک ہوئے۔ مرنے والوں میں سے 8 کا تعلق ایک پولیس افسر کے خاندان سے تھا۔ نوید اقبال بھی انتقال کر گئے۔ پاکستان کے وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا کہ رات کے وقت علاقے میں 1.2 میٹر سے زیادہ برف پڑی۔

پاکستان میں برف باری کے باعث 22 افراد ہلاک ہو گئے۔

ٹریفک پر پابندی لگا دی گئی، اور ہزاروں گاڑیوں کو برف سے باہر نکالا گیا، جبکہ ایک ہزار سے زائد گاڑیاں علاقے میں پھنسی رہیں، جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ سیکیورٹی فورسز اور ایک خصوصی فوجی پہاڑی یونٹ کو مدد کے لیے بلایا گیا ہے۔ جیسا کہ علاقے کے مقامی اہلکار نے اشارہ کیا؛ عمر مقبول نے نوٹ کیا کہ شدید برف باری نے رات کے وقت امدادی کارروائیوں میں رکاوٹ ڈالی، اور یہاں تک کہ برف ہٹانے کے لیے لائے گئے بھاری سامان کو بھی پہلے تو روک دیا گیا، انہوں نے مزید کہا کہ پھنسے ہوئے سیاحوں میں خوراک اور کمبل تقسیم کیے گئے۔

شهد منتجع موري الجبلي بباكستان، ليلة أمس حادثًا مأسويًا بمصرع 22 شخصًا حتفهم جراء انخفاض حرارة أجسامهم داخل سيارتهم التي حوصروا في داخلها، نتيجة لانخفاض درجة الحرارة إلى 8 درجات تحت الصفر المئوي بسبب التساقط الكثيف للثلوج في المنتجع.

وأشار ضابط بشرطة إسلام أباد إلى أن الحادث وقع بالمنتجع ليلاً، وأودى بحياة 22 شخصًا، مشيرًا إلى أن 8 منهم ينتمون إلى عائلة زميلهم الضابط “نافيد إقبال” بشرطة إسلام أباد، والذي قضى نحبه هو الآخر في الحادث.

منتجع موري الجبلي قرب إسلام_آباد يتحول الى كابوس

المحصلة النهائية : وفاة 22 شخصاً بينهم أطفال

8 من القتلى من عائلة ضابط بالشرطة

نافيد إقبال الذي توفي هو الآخر

وأوضح وزير الداخلية الباكستاني شيخ رشيد أحمد، أن أكثر من 1.2 متر من الثلوج تساقطت في المنطقة خلال الليل وتم حظر حركة المرور، وأن آلاف المركبات انتشلت من الثلوج، فيما بقيت أكثر من 1000 مركبة عالقة في المنطقة، مبينًا أنه تم استدعاء قوات أمن ووحدة جبلية عسكرية خاصة للمساعدة. فيما اشار المسؤول المحلي بالمنطقة؛ عمر مقبول إلى إن تساقط الثلوج بكثافة أعاق جهود الإنقاذ أثناء الليل، حتى إن المعدات الثقيلة التي تم إحضارها لإزالة الجليد علقت في البداية، مضيفا أنه تم توزيع الطعام والبطانيات على السياح العالقين.

عماد سعد

محرر صحفي يختص بتغطية جميع الأخبار الرياضية والسياسية المحلية والعالمية والدوريات الأوروبية

اترك تعليقاً

لن يتم نشر عنوان بريدك الإلكتروني.

زر الذهاب إلى الأعلى